گول روٹی

User avatar
kandwal
Posts: 160
Joined: December 13th, 2020, 6:11 pm
Location: islamabad

گول روٹی

Post by kandwal »

گول روٹی

پریشانی اس کے چہرے سے عیاں تھی . شادی كے چند دن بعد ہی آج تیسری مرتبہ روٹیاں گول نہیں بنی تھیں۔ اسے یقین تھا كے آج اس کی خیر نہیں۔
کھانے كے دوران اس کی ساس نے اسے دیکھا ، اور پھر اس كے کانوں میں انکی شفقت بھری آواز آئی،
"بیٹی ، کوئی بات نہیں۔ گول روٹیاں، بہو كے اچھے کردار اور ماں باپ کی بہترین تربیت اور تہذیب سے بڑھ کر نہیں ۔
پِھر ، کھانے میں نخرے اور نا پسندیدگی ہمارے دین کا طریقہ نہیں . کوئی بات نہیں ، تمہارا اپنا گھر ہے ، سیکھ جاؤگی، آؤ كھانا کھائیں۔"

کوئی انسان اپنے جگر کا ٹکڑا کسی کو ایسے نہیں دیتا دوسروں کی بیٹیوں کو اپنی بیٹی سمجھیں کہ آپ کی اپنی بیٹی دوسرے گھر خوش رہے


Pakistan Affairs MCQs Series